کرونا ہے یا عام بیماری، گھر بیٹھے معلوم کرنے کا طریقہ 👇


کرونا ہے یا عام بیماری، گھر بیٹھے معلوم کرنے کا طریقہ:👇*
ڈاکٹروں کی جدید تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ کرونا کے 70 فیصد متاثرین کی چکھنے اور سونگھنے کی حس ختم ہوجاتی ہے. اور جب یہ صحتیاب ہوجاتے ہیں تو ان کی حس بھی بحال ہوجاتی ہے.
ڈاکٹرز اس علامت کو خدائی نعمت قرار دے رہے ہیں.
آسان الفاط میں سمجھ لیں کہ اگر آپ کو کھٹی میٹھی یا کڑوی اشیاء(جیسے نمک، مرچ یا کسی کڑوی گولی) کے زائقے کا پتا نہیں چل رہا یا عطر /سینٹ کی خوشبو محسوس نہیں ہورہی تو یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ آپ کرونا سے متاثر ہوچکے ہیں.... چاہے آپ میں ظاہری علامات نہ بھی ہوں، فورا خود کو گھر کے تمام افراد سے الگ کرکے قریبی قرنطنیہ سینئر پہنچ جائیں تاکہ بروقت علاج سے آپکی جان بچائی جاسکے.
اور اگر آپ میں کرونا کی تمام علامات موجود ہوں(جیسے بخار ہو، نزلہ زکام، سر درد) بھی ہو لیکن اسکے باوجود بھی آپ کی چکھنے اور سونگھنے کی حس(صلاحیت)بلکل ٹھیک کام رہی ہے پھر مبارک ہو آپکو کرونا وائرس نہیں بلکہ موسمی بیماری ہے.
ڈاکٹروں کے مطابق یہ خدا کی طرف سے کرونا متاثرین کو تلاش کرنے کی ایک نعمت ہے........ہمیں اس سے فائدہ اٹھانا چاہیے.
برائے مہربانی آج سے کرونا سے خوفزدہ ہونا چھوڑ دیں،
معمولی نزلہ زکام یا بخاد کی صورت میں خود کو کرونا مریض نہ سمجھیں.
اگر پھر بھی شک ہو تو سب سے پہلے اپنے گھر میں ہی اپنی سونگھنے اور چکھنے کی حس کو چیک کریں، گھر میں نمک، مرچ، یا کوئی کڑوی گولی منہ میں رکھ کر دیکھیں کہ زائقہ محسوس ہورہا ہے یا نہیں، اور سینٹ یا عطر یا کسی اور خوشبو کو سونگھ کر دیکھیں کہ محسوس ہورہا ہے یا نہیں. اگر سب صحیح ہےتو پھر پریشان مت نہ ہوں، نہ ہی گھر سے نکلیں، گھر میں ہی پیناڈول سے اپنا بخار اتار سکتے ہیں، نزلہ زکام ہو تو اسے چھوڑ دیں یہ خود ہی ٹھیک ہوجائے گا.
*پھر بھی پریشانی ہو تو حکومت کی ہیلپ لائن 1166 پر کال کرکے اپنے حالات سے آگاہ کردیں، وہ آپ کو تسلی دیکر سب سمجھادیں گے.*
*قرنطینہ سینئرز میں بھی مریض کو پہلے کڑوی گولی کھلاکر چیک کیا جارہا ہے کہ زائقہ محسوس ہورہا ہے یا نہیں، ڈاکٹرز کے مطابق بہت سے مریض عام بخار کی وجہ سے خود کو کرونا متاثر سمجھ کر قرنطینہ آگئے تھے جنہیں خیریت سے یہ کہہ کر واپس بھیج دیا گیا کہ مبارک ہو آپ کو کرونا نہیں ہے.*
لیکن خدا کے لیے کرونا سے خوفزدہ ہوکر اپنی جان مت لیں، خودکشی مت کریں، یاد رکھیں زندگی و موت اللہ کے اختیار میں ہے نہ کہ کرونا کے. اس لیے ڈرنا چھوڑ دیں اور اوپر بتائی گئی ہدایات کے مطابق خود کو چیک کرتے رہیں. ہوسکے تو پورے گھر کو چکھنے اور سونگھنے کے تجربے سے گزار کر تسلی کریں کہ سب خیریت سے ہیں یا نہیں. یاد رکھیں اس وقت کرونا کا واحد علاج صرف احتیاط ہے لہذہ خود بھی احتیاط کریں اور گھر والوں کو بھی چیک کرتے رہیں کیونکہ گھر میں ایک فرد بھی کرونا متاثر ہوگا تو اس سے پورا گھر متاثر ہونے کے قوی امکانات ہوتے ہیں.
*احتیاط احتیاط اور صرف احتیاط کریں*
*گھر سے ہرگز مت نکلیں*
*صبح و شام سب کی چکھنے اور سونگھنے کی حس کو چیک کرتے رہیں.*
آخر میں یاد رکھیں کرونا اللہ سے بڑا نہیں ہے. اللہ کے حکم کے بغیر نہیں لگ سکتا اور جسے متاثر کرنے کا اللہ فیصلہ فرماچکا ہے اسے دنیا کی کوئی طاقت کرونا سے نہیں بچاسکتی لہذہ اللہ پر توکل رکھیں اور پرامن زندگی گزارتے رہیں. شکریہ
*نوٹ : چکھنے/سونگھنے کی ٹیکنک قرنطینہ میں ڈیوٹی کرنے والے ایک سینیئر ڈاکٹر نے بتائی ہے.*
کرونا ہے یا عام بیماری، گھر بیٹھے معلوم کرنے کا طریقہ 👇 کرونا ہے یا عام بیماری، گھر بیٹھے معلوم کرنے کا طریقہ 👇 Reviewed by SaQLaiN HaShMi on 9:55 AM Rating: 5

وہ چند سبق جو ہم نے پچھلے دنوں سیکھے


وہ چند سبق جو ہم نے پچھلے دنوں سیکھے:
1-زیادہ تر لوگ آسانی کے ساتھ گھر بیٹھ کر کام کر سکتے ہیں.
2-ہم اور ہمارے بچے فاسٹ فوڈ کھائے بنا زندہ رہ سکتے ہیں.
3-معمولی جرم کرنے والوں کو قید سے آزاد کرنا بہتر ہے.
4-ہم محض دنوں میں ہسپتال بنا سکتے ہیں.
5-ہم غریبوں پر کروڑوں روپے خرچ کر سکتے ہیں اور اس کے لیے ہمیں کوئی فیتہ کاٹنے یا تقریب کرنے کی بھی ضرورت نہیں.
6-ہم اپنی چھٹیاں یورپ یا امریکہ جائے بغیر بھی گزار سکتے ہیں.
7-ترقی یافتہ قومیں بھی اسی طرح کمزور ہیں جس طرح کے غریب اقوم، بلکہ اس سے بھی کہیں زیادہ کمزور ہیں
8-ہمارا خاندانی نظام اب بھی صحیح سلامت ہے.
9-اگر ہم سمجھ داری سے استعمال کریں تو ہمارے پاس پیسہ بہت ہے.
10-ہم غیر ضروری طور پر پیٹرول کی بڑی مقدار استعمال کرتے ہیں اس کا براہ راست برا اثر ہماری اکانومی پر پڑتا ہے.
11-امیروں کے بچے غریب بچوں سے کہیں زیادہ کمزور ہیں.
12-دولت مند لوگ طاقت ور نہیں بلکہ کھوکھلے ہیں.
13-ہر نئے فیشن ڈیزائنر کی لان خریدنا ضروری نہیں.
14-بیوی کسی بیوٹی پارلر کا ہفتہ وار چکر لگائے بنا بھی اپنے شوہر کے ساتھ رہ سکتی ہے.
15-بزرگ کسی بھی خاندان کے لیے ریڑہ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں.
16-میڈیا محض وقت کا زیاں ہے۔
17-سکولوں نے غیر ضروری اور بیکار چیزوں کے لیے ہمارے بچوں پر خواہ مخواہ بوجھ ڈالا ہوا ہے.
وہ چند سبق جو ہم نے پچھلے دنوں سیکھے وہ چند سبق جو ہم نے پچھلے دنوں سیکھے Reviewed by SaQLaiN HaShMi on 9:50 AM Rating: 5

*ضروری اعلان*


*ضروری اعلان*

کل سے 29۔03۔2020 ، کسی بھی چیز کے لئے حتی کہ  
 روٹی کے لئے بھی گھر نہ چھوڑیں ، کیوں کہ کورونا وائرس
کے بدترین دور کی شروعات ہو چکی ہے ، کورونا وائرس کی انکیوبیشن کی تاریخ جو کہ 14 دن ہے پوری ہوچکی ہے جس کی وجہ سے بہت سارے مثبت کیس نکلنا شروع ہوجائیں گے اور بہت سے لوگوں کا اس سے متاثر ہونے کا امکان ہو گا اگر آپ نے احتیاط نہ کی اور میل جول جاری رکھا تو آپ وائرس کو خود گھر لے کر آئیں گے جس سے آپ کا پورا خاندان متاثر ہونے کا امکان ہے ۔ ، لہذا یہ انتہائی ضروری ہے کہ گھر میں رہیں ہے اور بہت محتاط رہیں۔ یہ انتہائی ضروری ہے کہ 23 مارچ سے 3 اپریل تک ہم خود اپنا خیال رکھیں کیونکہ وائرس نمودار ہو نے کی آخری حد دو ہفتوں کی ہے جو کہ پوری ہو چکی ہے۔ عام طور پر ان دو ہفتوں میں تمام انفیکشن والے مریض میں علامات ظاہر ہوجاتی ہیں اور ان کا علاج ممکن ہے ۔ پھر اگلے دو ہفتوں کے لئے بھی سکون سے رہنا ہوگا اور ان دو ہفتوں میں یہ پھیلنا بھی رک جائے گا ۔ * اٹلی میں کیا ہوا؟ یہ کہ انھوں نے وائرس کا چوٹی کا سیزن نظرانداز کیا تھا اور اسی وجہ سے تمام کیس ایک ساتھ نکلے تھے جن کا ایک ہی وقت میں علاج کرنا ناممکن ہو گیا تھا جس کی وجہ سے شرح اموات میں اضافہ ہو گیا ۔ * آپ سب سے درخواست ہے کہ کسی سے بھی نہیں ملیں ، یہاں تک کہ ایک ہی خاندان کے لوگ بے شک سامنے گھر میں ہی کیوں نہ رہتے ہوں ان سے بھی نہ ملیں ۔ نہ ہی گھر بلائیں۔ یہ ھم سب کی بھلائی کے لئے ہے۔ * ہم انفیکشن کے میکسم اسٹیج میں جا چکے ہیں ۔ جس سے بچنا انتہائی ضروری ہے ۔ کیونکہ اگر یہ وقت گزر گیا تو آگے انشاءاللہ جلد ہی وائرس پھیلنا رک جائے گا ۔ اور جن مریضوں میں کو رونا وائرس مثبت آیا ہے ان کا علاج ہو جائے گا ۔
*احتیاط علاج سے بہتر ہے*۔
۔
زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچائیں تاکہ اس سے متاثر ہونے کا امکان کم ہوجائے ۔
*ضروری اعلان* *ضروری اعلان* Reviewed by SaQLaiN HaShMi on 9:46 AM Rating: 5
Theme images by lucato. Powered by Blogger.